عالمی خبریں

title_image


Share on Facebook

ملیشیا کے سابق وزیراعظم نجیب رزاق کو بدعنوانی کے الزامات میں گرفتار کرلیا گیا ہے۔ سابق وزیر اعظم رزاق کے الگ الگ گھروں پر مارے گئے چھاپوں میں 273.3 ملین ڈالر (تقریباً 1872 کروڑ روپئے) کی جائیداد کا پتہ چلا تھا۔ بدعنوانی مخالف ایجنسی نے تمام جائیداد ضبط کرلیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق ملیشیا کے سابق وزیراعظم نجیب رزاق پر بدعنوانی مخالف ایجنسی نے غلط طریقے سے جائیداد جمع کرنے کا الزام لگایا ہے۔ سابق وزیراعظم نجیب رزاق پر الزام ہے کہ انہوں نے ایک سرکاری کمپنی 1 ایم ڈی بی سے تقریباً 4760 کروڑ روپئے اپنے اکاونٹ میں جمع کروالئے۔

اس سال مئی میں ہوئے الیکشن میں نجیب رزاق کی پارٹی کو شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ اس کے بعد سے ہی بدعنوانی مخالف ایجنسی مسلسل ان پر نظر رکھ رہی تھی۔ نجیب اور ان کی اہلیہ روشمہ منصور سے جانچ ایجنسی پوچھ گچھ کررہی ہے۔

بتایا جاتا ہے کہ نجیب رزاق کے پاس موجود سامان کا اندازہ لگانے کے لئے 150 افسروں کی ٹیم کو لگایا گیا تھا۔ یہ ٹیم ایک ماہ سے زیادہ وقت تک سامان کا حساب جوڑتی رہ گئی۔ جانچ ایجنسی کو نجیب رزاق کے ٹھکانوں سے 1498 کروڑ روپئے کے زیورات برآمد ہوئے ہیں جبکہ 198 کروڑ نقد ملے ہیں۔ اسی کے ساتھ 26 الگ الگ ممالک کی کرنسی بھی برآمد ہوئی ہیں۔