قومی خبریں

title_image


Share on Facebook

اترپردیش کے کانپور میں مبینہ عصمت دری کا حیران کن معاملہ سامنے آیا ہے۔ یہاں مہاراج پور تھانہ علاقے کے ایک گاوں میں 6 سے 12 سال کے چار بچوں نے ایک چار سال کی بچی سے مبینہ طور پر عصمت دری کی۔ متاثرہ بچی کے والد کی شکایت پر پولیس نے چاروں بچوں کے خلاف پاکسو ایکٹ کے تحت کیس درج کیا ہے اور انہیں جوینائل ہوم بھیج دیا ہے۔

پولیس نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ ان بچوں نے موبائل فون یا کہیں پر پورن کلپس دیکھی ہوگی، جس کے بعد واردات کو انجام دیا۔ فی الحال اس پورے معاملے کی تفتیش جاری ہے۔

کیا ہے پورامعاملہ؟:

تھانہ انچارج راکیش موریہ نے بتایا کہ حادثہ 30 جون کا ہے۔ بچی کے والد نے دو جولائی (منگل) کو پولیس تحریر دی۔ پولیس کے مطابق بچی کے والد نے بتایا کہ جب ان کی بیٹی کافی دیر تک نہیں نظر آئی تو اس کو تلاش کیا گیا۔ اس درمیان بچی خالی پلاٹ میں بے ہوش پڑی ملی۔ بچی نے ہوش میں آنے پر پوری بات بتائی۔ بچی کے والد نے کہا کہ چاروں بچوں کے اہل خانہ کو جب انہوں نے یہ بات بتائی، تو وہ لوگ مارپیٹ کرنے پر آمادہ ہوگئے۔

پورن ویڈیو دیکھتے تھے بچے:

کچھ میڈیا رپورٹس کے مطابق پولیس نے بتایا کہ جانچ میں پتہ چلا ہے کہ بچے موبائل میں پورن ویڈیو دیکھتے تھے۔ اسی سے انہیں سیکس کے بارے میں جانکاری ہوئی۔ موبائل پر دیکھنے کے بعد انہوں نے ویسی ہی حرکت بچی کے ساتھ کی۔ پولیس نے بچی کو میڈیکل کے لئے بھیجا ہے۔

اقبال جرم

پولیس نے بتایا کہ چاروں بچوں نے اپنے اوپر لگائے گئے الزامات کو قبول کرلیا ہے۔ فی الحال چاروں کو جوینائل ہوم میں رکھا گیا ہے۔