مہاراشٹر

title_image


Share on Facebook

ممبئی:ممبئی میں دوروزسے جاری بارش کا زور کمزورضرورہوگیا ہے ،لیکن وقفہ وقفہ سے تیزہواؤں سے تیزبارش کا سلسلہ جاری ہے اور آج صبح سینٹرل ریلوے کی مین لائن اور ہاربر لائن مصروف اوقات میں بُری طرح متاثر ہوئی ہیں ،بتایا جارہا ہے کہ دونوں لائنوں پر ٹرینیں 20-25منٹ کی تاخیر سے رواں دو اں ہیں۔ بمبئی ہائی کورٹ نے گزشتہ منگل کو اندھیر ی ریلو ے اسٹیشن کے قریب اووربریج گرنے کے واقعہ کے لیے میونسپل کارپوریشن کو ذمہ دار ٹہرایاہے۔عدالت دریافت کیا ہے کہ آیا محکمہ ریلوے غیرملکی ایجنسی ہے کہ کارپوریشن ،اس کے ساتھ تعاون نہیں کرتا ہے۔

ذرائع کے مطابق دونوں لائنوں پر رات کی بارش کی وجہ سے پانی جمع ہونے پٹری کے پوائنٹ اور سگنل میں نقص پیدا ہوگیا تھا ۔دریں اثناء اندھیری میں گزشتہ منگل کو ریل اوورپل کے منہدم کے بعد گزشتہ شب ٹرین خدمات بحال کردی گئی ہیں اور طویل مسافتی ٹرینیں ممبئی سینٹرل ،دادراور باندرہ سے اپنے مقررہ وقت پر روانہ ہوئی ہیں ۔اس درمیان بمبئی ہائی کورٹ نے گزشتہ منگل کو اندھیر ی ریلو ے اسٹیشن کے قریب اووربریج گرنے کے واقعہ کے لیے میونسپل کارپوریشن کو ذمہ دار ٹہرایاہے۔عدالت دریافت کیا ہے کہ آیا محکمہ ریلوے غیرملکی ایجنسی ہے کہ کارپوریشن ،اس کے ساتھ تعاون نہیں کرتا ہے۔عدالت نے واضح طورپر کہا ہے کہ اندھیری واقعہ کے لیے ممبئی میونسپل کارپوریشن ذمہ دار ہے ۔

واضح رہے کہ منگل کو اندھیری کے واقعہ کے لیے میونسپل کارپوریشن انتظامیہ نے اپنی ذمہ داری سے پلڑا جھاڑتے ہوئے کہا کہ محکمہ ریلوے اس کے لیے ذمہ دارہے ،بمبئی ہائی کورٹ کی جسٹس نریس پاٹل اور جسٹس گریش کلکرنی پرمشتمل بینچ نے سخت نوٹس لیتے ہوئے کہا کہ اندھیری میں پل گرنے کے بعد بی ایم سی کا یہ کہنا ہے کہ یہ محکمہ ریلوے کی ملکیت تھا،ایسا کب تک کہا جائے گا،؟ممبئی کے شہریوں کو سہولیات مہیاکرانے کی ذمہ داری میونسپل کارپوریشن کی ہے اور کارپوریشن کو اس ذمہ داری سے راہ اختیار نہیں کرنا چاہئے ۔

اس قسم کے حادثات کے لیے بی ایم سی کی ہی ذمہ داری عائد ہوتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ شہر میں لازمی سہولیات اور روزمرہ کے معاملات کے لیے صرف صرف بی ایم سی ہی ذمہ دارہے اور اسے اپنے فرائص بخوبی انجام دینا چاہئے ۔جبکہ عوام کے منتخب نمائندے(کارپوریٹر) اور کارپوریشن کے افسران بھی اس کے لیے قصوروار ہیں۔ان پر ذمہ داری کیو ں عائد نہیں کی جاتی ہے۔ہائی کورٹ میں دائر ایک مفاد عامہ (پی آئی ایل ) پر عدالت نے کارپوریشن کو آڑے ہاتھوں لیا ہے ،سمیتا دھرو نامی ایک سماجی کارکن نے رٹ دائر کی ہے۔عدالت نے کہا کہ پل کا آڈٹ بھی نہیں کرایا گیا اور میونسپل کارپوریشن نے اس سلسلہ میں کوئی دلچسپی نہیں دکھائی تھی۔