دہلی

title_image


Share on Facebook

سری نگر:جنوبی کشمیر کے ضلع کولگام کے ریڈونی میں ہفتہ کے روز سیکورٹی فورسز اور احتجاجی مظاہرین کے درمیان ہوئے تصادم میں فوج کی گولی لگنے سے ایک کمسن لڑکی سمیت 3 عام شہریوں کی موت ہو گئی۔ بتایا جا رہا ہے کہ پولیس کانسٹیبل جاوید احمد ڈار کی موت سے ناراض مظاہرین نے سیکورٹی دستوں پر پتھراو شروع کر دیا جس کے جواب میں فوج کو بھی فائرنگ کرنا پڑی۔ اس فائرنگ میں کئی لوگ زخمی بھی ہو گئے۔

معاملہ کی سنگینی کے مدنظر، جنوبی کشمیر میں انٹرنیٹ خدمات بند کر دی گئی ہیں۔ دو دن پہلے اغوا کرنے کے بعد دہشت گردوں کی گولی سے ہلاک پولیس کانسٹیبل جاوید احمد ڈار کی موت سے ناراض کشمیر کی عوام سنیچر کی صبح سڑک پر اتر آئی۔ مظاہرہ کر رہے مظاہرین کو جب فوج نے روکنا چاہا تو انہوں نے فوج پر پتھراؤ شروع کر دیئے۔ دیکھتے ہی دیکھتے احتجاج پر تشدد ہو گیا۔

مظاہرین کو روکنے کے لئے فوج کو فائرنگ کرنی پڑی، جس میں تین نوجوانوں کی موت ہو گئی۔ مرنے والوں کی شناخت شاکر احمد (22)، ارشاد ماجد (20) اور عندليب (16) کے طور پر کی گئی ہے۔ فائرنگ میں کئی لوگوں کے زخمی ہونے کی بھی اطلاع ہے۔