قومی خبریں

title_image


Share on Facebook

کلکتہ : وزیر اعظم نریندر مودی کی مدنی پور میں منعقد ہ کسان ریلی میں شدید بارش کی وجہ سے پنڈال گرنے سے 22افرادزخمی ہوگئے ، جنہیں مدنی پور اسپتال میں داخل کرایا گیاہے۔وزیرا عظم نے اسپتال جاکر زخمیوں سے ملاقات کی اور علاج میں ہرممکن مدد کرنے کی یقین دہانی کرائی۔ وزیر اعظم کی تقریر کے دوران ہی یہ حادثہ پیش آیا ۔وزیر اعظم نے ایس پی جی جوانوں کو ہدایت دی کہ زخمیوں کو فوری طور پر اسپتال میں پہنچائیں ۔

اس سے قبل اپنے خطاب کے دوران وزیر اعظم مودی نے ممتاحکومت اور سابقہ بایاں محاذ حکومت کی سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ’’ہم نے کسانوں کیلئے اتنا بڑا فیصلہ کیا ہے کہ آج ترنمول کانگریس کو بھی اس پروگرام میں ہمارے استقبال کیلئے جھنڈے لگانے پڑے ہیں اور ان کو اپنی تصویر لگانی پڑی ہے۔یہ بھارتیہ جنتا پارٹی کی نہیں بلکہ کسانوں کی جیت ہے۔

وزیرا عظم مودی نے کہا کہ کئی دہائیوں تک اقتدار میں رہنے کے بعد کمیونسٹوں نے بنگال کو جس حالت میں پہنچایا تھا ، آج ممتا کے دور اقتدار میں اس سے بھی خراب حالات ہوچکے ہیں ۔یہاں سنڈیکٹ ہے، جبراًوصولی ہے۔انہوں نے کہا کہ سنڈیکٹ کے ذریعہ کسانوں سے ان کا حق چھینا جاتا ہے۔سنڈیکٹ کے ذریعہ مخالفین پر حملے کرائے جاتے ہیں ۔سنڈیکٹ کے ذریعہ غریبوں پر مظالم کیے جاتے ہیں ۔انہوں نے کہاں کہ ’’ماں ، ماٹی اور مانش کی بات کرنے والوں کا اصلی چہرہ گزشتہ 8سالوں میں سنڈیکٹ کے ذریعہ سامنے آچکا ہے ۔

وزیر اعظم نے کہا کہ کسانوں کے مفادات کو نظر انداز کرکے کوئی بھی سماج اور ملک آگے نہیں بڑھ سکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ کسان ایم ایس پی کو حاصل کرنے کیلئے مسلسل احتجاج کررہے تھے ، مگر دہلی میں بیٹھے لوگ کسانوں کی نہیں سن رہے تھے ۔مگر کسانوں کو ڈیڑھ گنا فائدہ دینے کا تاریخی فیصلہ ان کی حکومت نے کیا ہے ۔