عالمی خبریں

title_image


Share on Facebook

نئی دہلی:پاکستان میں 25 جولائی کو عام انتخابات کیلئے ووٹ ڈالے جائیں گے ۔ ملک بھر میں انتخابی سرگرمیاں عروج پر ہیں ۔ امیدوار ووٹروں کو لبھانے کیلئے طرح طرح کے ہتھکنڈے اپنا رہے ہیں ۔ جہاں امیدوار ووٹروں کو پیسہ دے کر اپنے حق میں ووٹ ڈالنے کیلئے آمادہ کررہے ہیں ، وہیں ووٹروں سے طرح طرح کے عہد و پیمان بھی لئے جارہے ہیں۔

تاہم خیبر پختون خواہ کے قبائلی علاقوں میں ایک عجیب و غریب بات سامنے آئی ہے۔ ڈان اخبار کی ایک رپورٹ کےمطابق یہاں امیدوار نہ صرف ووٹرز سے قرآن پر حلف لے رہے ہیں بلکہ انہیں اس بات کا پابند کرکے قسم بھی لی جارہی ہے کہ اگر انہوں نے ان کے حق میں ووٹ نہیں دیا تو ان کی قانونی شادی ختم ہوجائے گی۔

رپورٹ کے مطابق انتخابات کا بائیکاٹ کرنے والے ایک شخص کا کہنا ہے کہ امیدوار ووٹرز سے وعدہ لیتے ہیں کہ اگر وہ انہیں ووٹ نہیں دیں گے تو ان کی شادی منسوخ ہوجائے گی اور ان کی بیویوں کو طلاق ہوجائی گی۔ رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ انتخابی افسران کی جانب سے اب تک اس بابت کوئی نوٹس نہیں لیا گیا ہے۔

اخبار کی رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ ایسے ووٹرز، جو خاص طور پر غریب اور کم پڑھے لکھے ہیں، انتخابات کو جمہوری نمائندگی کے طور پر نہیں دیکھتے ہیں بلکہ یہ ان کے لیے موقع ہوتا ہے کہ وہ ووٹ فروخت کرکے انتخابی عمل میں اپنا حصہ ڈالنے کا دعویٰ کرسکیں۔