قومی خبریں

title_image


Share on Facebook

لکھنو: بہوجن سماج پارٹی کی قومی صدرمایاوتی نے پارٹی کے قومی کوآرڈینیٹر جے پرکاش سنگھ کو معطل کردیا ہے۔ مایاوتی نے کہا کہ مجھے اطلاع ملی کہ پیرکو لکھنو میں ہوئے کارکنان اجلاس میں جے پرکاش سنگھ نے پارٹی کے نظریہ کے خلاف تقریرکی اور اپوزیشن جماعتوں کے سینئرلیڈروں کے خلاف ذاتی تبصرہ کیا۔

مایاوتی نے واضح کیا کہ یہ جے پرکاش سنگھ کی ذاتی رائے ہے۔ بی ایس پی کا اس سے کوئی لینا دینا نہیں ہے۔ مایاوتی نے کہا کہ اس وجہ سے جے پرکاش سنگھ کو فوری طورپران کے عہدے سے ہٹایا جاتا ہے۔

لکھنو واقع اندرا گاندھی فاونڈیشن میں منعقدہ بی ایس پی کارکنان کے اجلاس میں پارٹی کے نیشنل کوآرڈینیٹر جے پرکاش سنگھ اورویرسنگھ نے راہل گاندھی پرتبصرہ کیا تھا۔ اس دوران انہوں نے کہا تھا کہ راہل گاندھی کی ماں سونیا گاندھی غیرملکی نژاد ہیں، لہٰذا راہل گاندھی کبھی بھی ملک کے وزیراعظم نہیں بن سکتے ہیں۔ دونوں لیڈروں کا کہنا تھا کہ موجودہ وقت کا مطالبہ ہے کہ مایاوتی ملک کی وزیراعظم بنیں۔

اتحاد کو لے کر بیان بازی نہ کرنے کی نصیحت:

بتایاجارہا ہے کہ جے پرکاش سنگھ کا یہی بیان ان کے خلاف گیا۔ مایاوتی نے ان کے خلاف فوری اثرسے کارروائی کرتے ہوئے انہیں قومی کوآرڈینیٹر کے عہدہ سے ہٹا دیا۔ مایاوتی نے اس دوران پارٹی لیڈروں کو سخت ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ اترپردیش یا ملک کے کسی بھی ریاست میں اتحاد کولے کرکوئی بھی بیان بازی نہ کریں۔ اس موضوع کو وہ پارٹی ہائی کمان پر چھوڑدیں۔

واضح رہے کہ پیر کو زونل سطحی میٹنگ میں قومی کنوینرسمیت تمام عظیم بی ایس پی لیڈر موجود رہے۔ اس موقع پر مایاوتی کو اتحاد کے وزیراعظم کا چہرہ کے طور پر پیش کیا جانے لگا تھا۔ بی ایس پی لیڈروں کا کہنا تھا کہ سبھی علاقائی جماعتوں نے مایاوتی کو اپنا لیڈرمانا ہے۔ بی ایس پی صدرآرایس کشواہا نے کہا کہ بی ایس پی سب کو ساتھ لے کر چلنے والی پارٹی ہے۔ غریب، پسماندہ اورتمام طبقات کو صرف بی ایس پی نے نمائندگی دی ہے۔

انہوں نے بی جے پی اور کانگریس پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ باقی سبھی پارٹیوں نے صرف ان کا استعمال کیا ہے۔ انہوں نے وزیراعظم نریندرمودی پرتنقید کرتے ہوئے کہا کہ بھگوان رام کے نام پردھوکہ دینے والے کواس بارسبق سکھانا ہے۔ صرف مایاوتی ہی تمام طبقات کی فلاح وبہبود کریں گی، اس لئے ہم سبھی کومصروف ہوکراس بارایسی زمین تیارکرنی ہے کہ دوسری پارٹیاں آگے نہ بڑھ سکیں۔