قومی خبریں | دہلی

title_image


Share on Facebook

سری نگر: نیشنل کانفرنس کے نائب صدر اور سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ نے پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کے راجیہ سبھا کے دپٹی چیئرمین کے عہدے کے لئے جمعرات کو ہونے والے انتخابات کی ووٹنگ میں حصہ نہ لینے کے فیصلے پر کہا ہے کہ محبوبہ مفتی نے زہر کے گھونٹ پینا جاری رکھا ہے۔

انہوں نے بدھ کے روز کشمیر کے ایک مقامی روزنامے کی خبر جس کی سرخی کچھ یوں تھی: ’پی ڈی پی کی بی جے پی پر ایک اور مہربانی۔ پارٹی کے اراکین پارلیمان ڈپٹی چیئرمین کے عہدے کے لئے ہونے والی ووٹنگ میں حصہ نہیں لیں گے‘ کو اپنے ٹویٹر اکاونٹ پر شیئر کرتے ہوئے لکھا ’کل محبوبہ مفتی اور ان کی سوشل میڈیا آرمی مجھ سے ناراض تھی۔

محترمہ نے زہر کے گھونٹ پینا جاری رکھا ہے اور اپنے سردرد کے لئے ہمیں ذمہ دار ٹھہرا رہی ہیں‘۔ مبصرین کا کہنا ہے کہ پی ڈی پی اراکین پارلیمان ووٹنگ کے عمل میں حصہ نہیں لیں گے تو اس سے بی جے پی کا فائدہ ہوگا۔ تاہم ووٹنگ کے عمل میں حصہ نہ لینے پر پی ڈی پی ترجمان اعلیٰ رفیع احمد میر کا کہنا ہے ’ووٹنگ کے عمل میں حصہ نہ لینے کا فیصلہ بی جے پی کے ساتھ مخلوط حکومت ختم ہونے کے تناظر میں لیا گیا ہے۔

متحدہ ترقی پسند محاذ (یو پی اے) نے پی ڈی پی سے رجوع نہیں کیا۔ لہٰذا پارٹی لیڈران اور اراکین پارلیمان کے ساتھ مشاورت کے بعد فیصلہ لیا گیا کہ پارٹی مفاد میں ووٹنگ کے عمل میں حصہ لینے سے پرہیز کیا جائے گا‘۔ راجیہ سبھا میں پی ڈی پی کے اراکین کی تعداد دو ہے۔ محبوبہ مفتی نے گذشتہ ہفتے ایک پارٹی جلسے میں کہا تھا کہ ’بی جے پی سے اتحاد زہر کا گھونٹ پینے کے برابر تھا‘۔